راہ امام کے سپاہی

تحریر : سید معمر نقوی ڈویژنل صدر آئی ایس او پاکستان راولپنڈی ڈویژن
آج 22 مئی یوم تاسیس شجرہ طیبہ کاروان حق آئی ایس او پاکستان کے موقع پر تمام امامیہ جوان ،سابقین، علماء، ملت پاکستان کی خدمت میں مبارک باد عرض ہے۔ آج ہی کے دن 22 مئی 1972 کو اس شجرہ طیبہ کی بنیاد رکھی گئی جو پوری طرح اس آیت کریمہ کا مصداق ہے جس میں خالق حقیقی ارشاد فرماتا ہے

وَلۡتَکُنۡ مِّنۡکُمۡ اُمَّۃٌ یَّدۡعُوۡنَ اِلَی الۡخَیۡرِ وَ یَاۡمُرُوۡنَ بِالۡمَعۡرُوۡفِ وَ یَنۡہَوۡنَ عَنِ الۡمُنۡکَرِ ؕ وَ اُولٰٓئِکَ ہُمُ الۡمُفۡلِحُوۡنَ
تم میں سے ایک جماعت ایسی ہونی چائیے جو بھلائی کی طرف بُلائے اور نیک کاموں کا حکم کرے اور بُرے کاموں سے روکے ، اور یہی لوگ فلاح اور نجات پانے والے ہیں

ہر تنظیم کسی نا کسی مقصد کے لئیے ہی معرض وجود میں آتی ہے۔ کوئی نا کوئی ہدف ہر شہ کے پیچھے ہے اسی طرح آئی ایس او پاکستان کے بننے کا بھی ایک مقصد ہے جو کہ الحمدللہ آئی ایس او پاکستان کے نصب العین ہی سے واضح ہے نصب العین ہی خداوند متعال کی ذات ہے اس تنظیم کا مقصد ہی خالق حقیقی تک نوجوان نسل کو مربوط کرنا ہے۔ یقیناََ تنظیم ہدف نہیں بلکہ ذریعہ ہے ایک انسان کو خداوند عالم سے مربوط کرنے کا اور الحمد اللہ آئی ایس او پاکستان کی بدولت مجھ جیسے کتنے جوان اگر آج دعا و مناجات تزکیہ نفس سے جوڑے ہیں تو یہ اس تنظیم کی مرہون منت ہے۔ مجھے اس بات کا اعتراف کرتے ہوئے بہت فخر ہے کے اگر میری زندگی میں کوئی بہتری آئی ہے اگر میں نے ذرا برابر بھی حقیقت زندگی کو پہنچانا ہے تو اس تنظیم کی بدولت۔
میں تمام امامیہ جوانوں کو مبارک باد پیش کرتا ہوں آپ وہ جوان ہیں جو معاشرے میں مکتب اہلبیت علیہ السّلام کے وارث ہیں آپ رہبر معظم کی آنکھوں کا نور ہیں آپ شہید حسینی کے پر و بال ہیں آپ ڈاکٹر شہید کا وہ خواب ہیں جسے وہ پروان چڑھتا دیکھنا چاہتے تھے۔

الحمدللہ آج آئی ایس او پاکستان کو بنے ہوئے 49 سال گزرے گئے لاکھوں جوان اس شجرہ طیبہ سے گزرے اور آج معاشرے میں اپنی ذمہ داریاں سر انجام دے رہے ہیں اس تابناک ماضی کے ساتھ آج ہم موجودہ مسؤلین پر ایک ذمہ داری عائد ہوتی ہے کے ہم اس تنظیم کی فعالیت کے لئیے اپنا کردار ادا کریں اس تنظیم کی اقدار جو کے درحقیقت اسلامی اقدار ہیں انھیں زندہ رکھیں امام وقت سے کیے ہوئے اپنے حلف کی پاسداری کریں خدانہ خواستہ ایسا نا ہو کے امام وقت کے حضور ہمیں شرمندہ ہونا پڑے شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی ، شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی مقدس روح ہم سے ناراض ہو جائے۔ آج اگر اس بات کی خوشی ہے کے اس تنظیم کو 49 سال ہو گئے وہیں اس بات کے لئیے سوچنا بھی ہو گا کے آئندہ ہزاروں سالوں کے لئیے ہماری حکمت عملی کیا ہونی چاہیے۔

میں آپ تمام احباب کے خدمت میں گزارش کرتا ہوں کے اپنی تمام تر صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے اس الہی شجر کی حفاظت کریں خدا وند متعال کی بہت سی نعمتوں میں سے ایک آئی ایس او پاکستان ہے اور اس نعمت کا شکر ادا کرنا واجب ہے اور وہ شکر یہ ہے کے ہم راہ حجت خدا فرزند زہراہ حضرت امام مہدی علیہ السلام پر گامزن ہو کر خط امام خمینی و شہید حسینی کو زندہ رکھیں اور اس راہ کی حفاظت کریں جس کے لئیے شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی جیسی ہستی نے اپنی جان کا نذرانہ پیش کرنے سے بھی گریز نا کیا۔
خداوند متعال ہم سب کی توفیقات خیر میں اضافے فرمائے اور راہ امام عصر علیہ السلام پر گامزن رہنے کی طاقت عطا فرمائے۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *