پنجاب میں تکفیری عناصرکی دہشت گردانہ کاروائیاں سکیورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی جنرل سیکرٹری محمد عباس نے پنجاب کے علاقے بہاولنگر اور جڑانوالہ میں شیعہ شناخت پر تین افراد کی ٹارگٹ کلنگ کی پُر زورالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ آخر کیوں ایک ہی مسلک کے افراد کو مساجداور امامبارگاہوں میں مسلکی شناخت پر قتل کردیا جاتا ہے توکبھی لاپتہ کردیا جاتا ہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ پنجاب میں شیعہ ٹارگٹ کلنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات پر ملت تشیع پاکستان میں تشویش پائی جاتی ہے جب تک تکفیری اور
انتہاپسندانہ سوچ کا خاتمہ نہیں ہوجاتا مُلک میں امن ناممکن ہے

۔انہوں نے مزید کہا کہ تکفیری عناصر گزشتہ کئی ماہ سے پاکستان کے مختلف علاقوں میں انتہا پسندانہ کارووائیوں میں ملوث پائے گئے ہیں مگر قانون نافذ کرنے والوں بے بس نظر آتے ہیں ملت تشیع پاکستان یہ سوال کرنے میں حق بجانب ہے کہ صرف انہیں ہی کیوں نشانہ بنایا جا رہا ہے

۔انہوں نے وزیر اعظم پاکستان اور چیف جسٹس سے مطالبہ کیا کہ حالیہ واقعات کا فوری نوٹس لیا جائے اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ملوث تکفیری عناصر کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *